خشخاش کے بیج سفید اور سیاہ دو قسم کے ہوتے ہیں لیکن عموما سفید بیج کا استعمال زیادہ کیا جاتا ہے۔ یہ عموماً مختلف پکوانوں میں استعمال کی جاتی ہے۔

خشخاش کے بیج سفید اور سیاہ دو قسم کے ہوتے ہیں لیکن عموما سفید بیج کا استعمال زیادہ کیا جاتا ہے۔

یہ عموماً مختلف پکوانوں میں استعمال کی جاتی ہے۔

خصوصاً کوفتے جیسا مشہور سالن تو خشخاش کے بغیر ادھورا سمجھا جاتا ہے۔ اس کی علاوہ خشخاش کا استعمال پیسٹری اور ڈبل روٹی کی تیاری میں بھی کیا جاتا ہے۔ آپ کو سب شاید یہ معلوم نہیں ہوگا کہ خشخاش کے کئی طبی فوائد بھی موجود ہیں۔ خشخاش کا تیل بھی نکالا جاتا ہے جس کے لگانے سے درد جلد ٹھیک ہوجاتا ہے۔

خشخاش میں صحت بخش اجزاء پائے جاتے ہیں۔ جیسے میگنیشیم، میگنیز، آیوڈین، زنک، تھیامن، فولیٹ، کیلشیم ، آئرن، فاسفورس ، اومیگاتھری فیٹی ایسڈ اور فائبر پائے جاتے ہیں۔اینٹی انفلیمیشن خصوصیات کے باعث دیگر بیماریوں میں بھی مفید ہے۔

اگر خشخاش اور تربوز کے بیج پیس کر رکھ لیں اور رات کو سونے سے قبل چمچ دودھ میں ڈال کر پی لیں تو اس سے نیند بہت اچھی آئے گی۔

خشخاش میں ایک بہترین صحت کا خزانہ یہ ہے کہ اس کے استعمال سے وزن میں کمی آتی ہے۔اس کی وجہ یہ ہے کہ خشخاش میں اومیگا تھری فیٹی ایسڈ پائے جاتے ہیں جو وزن کو گھٹانے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

خشخاش کو پیس کر پانی میں شا مل کر کے پیسٹ بنا کر ماتھے پر لگائیں تو گرمی سے ہونے والا سردرد دور ہوجاتا ہے۔

خشخاش کو پانی میں پکا کر اس پانی سے سینکائی کرنے سے درد دور ہوجاتا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.