سورۃ اخلاص کے ذریعے 40سال پرانے جسمانی درد کا علاج ، بال بھی کبھی سفید نہیں ہونگے ، ایسی طاقت ملے گی کہ دنگ رہ جائیں گے

آپ نے جسم سے درد بھگانے اور جسمانی طاقت کے بے شمار نسخے آزمائے ہوں گے ۔ لیکن آج ہم آپ کو جو نسخہ بتائیں گے وہ نسخہ صرف نسخہ نہیں بلکہ ایک قرآن پاک کی مبارک سورت کا وظیفہ ہے۔ اس نسخے سے نہ صرف آپ کے جسم کے درد ختم ہوں گے ۔ بلکہ آپ کو ایسی جسمانی طاقت حاصل ہوگی کہ آپ ساٹھ سال کی عمر میں بھی تیس کےدکھائی دیں گے۔ اس نسخے سے آپ کے بال جلد سفید نہیں ہوں گے۔

جلد پر جھریاں ظاہر نہیں ہوں گے ۔ آپ اپنے اندر عجیب طاقت محسوس کریں گے ۔ ہمارا یہ نسخہ ایک دیسی انڈے اور سو رت اخلاص کا نسخہ ہے ۔ اب سوال یہ ہے کہ آپ نے اس نسخے کا استعمال کیسے کرنا ہے؟ اور اس کا طریقہ کار کیا ہے؟ یہ سب کچھ بتایا جائےگا۔ ایک دیسی انڈے کا نسخہ بہت ہی خاص نسخہ ہے۔ لیکن اس سے پہلے آپ کو سورت اخلاص کے فضائل کے بارے میں مختصراً بتاتے ہیں۔ یا د رہے

کہ سورت اخلاص قرآن پاک کی معروف سورتوں میں سے ایک ہے۔ اس سورت کی فضیلت میں حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ایک مرتبہ حضور اکرمﷺ نے لوگوں سے فرمایا کہ : سب جمع ہوجاؤ۔ میں تمہیں ایک تہائی قرآن سناؤں گا۔ جو جمع ہوسکتے تھے وہ جمع ہوگئے۔ آپ تشریف لائے۔ اور ” قل ھو اللہ ” یعنی ” سورت اخلاص” کی تلاوت فرمائی اور ارشادفرمایاکہ: یہ سورت ایک تہائی قرآن کے برابر ہے۔

سورت اخلاص قرآن پاک کی وہ سورت ہے۔جو کہ ہرمسلمان کو لازماً یاد ہوتی ہے۔ اور یہی وجہ ہے کہ جن لوگوں کو قرآن پاک کی باقی سورتیں یا د نہیں ہوتیں۔ وہ ہر نماز کی ہر رکعات میں اسی سورت کی تلاوت کرتے ہیں۔ یہ سورت بہت ہی آسان سورت ہے۔ لیکن فضائل کےلحاظ سے سورت کی مثل کوئی سورت نہیں ہوگی۔ جو کہ مختصر بھی اور فضائل کی حامل بھی ہے۔

حدیث کی روشنی میں آپ کو اس سورت کے فضائل بتاتے ہیں ۔ ایک روایت ہے کہ حضرت ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ نے ایک شخص کو سنا کہ وہ “قل ھواللہ ” کو باربار پڑھ رہا ہے۔ وہ صبح حضور اکرم ﷺ کےپاس آئے اور اس بات کا تذکر ہ کیا۔ گویا کہ انہوں نے اسے قلیل جانا۔ نبی کریم ﷺ فرمانے لگے اس ذات کی قسم ! جس کے ہاتھ میں میری جان ہے۔

بے شک ! یہ سورت قرآن کے تیسرے حصے کے برابر ہے۔ ایک دوسری روایت میں ام المومنین حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا بیان کرتی ہیں کہ حضور اکرم ﷺ نے ایک شخص کو لشکر کا سردار بنا کر بھیجا وہ نماز کی ہر رکعت میں اپنی قرات “قل ھو اللہ” پر ختم کرتا ۔ جب لشکر والے لوٹ کر مدینہ میں آئے تو انہوں نے حضور اکرم ﷺ سے اس کا ذکر فرمایاکہ : اس سے پوچھو ایسا کیوں کرتا ہے؟

لوگوں نے پوچھا ! تو وہ کہنے لگا ، اس سورت میں اللہ کی صفتیں مذکور ہیں۔ مجھےا س کا پڑھنا اچھا لگتا ہے۔ حضور اکرم ﷺ نے فرمایا : اس سے کہو کہ اللہ تم سے محبت کرتے ہیں۔ اب آپ کو وظیفے کے بارے میں بتاتے ہیں۔ جو کہ ایک دانا دیسی انڈے کا عمل ہے جس پر آپ نے “سورت اخلاص ” کا عمل کرنا ہے۔

اس کا طریقہ یہ ہے کہ آپ نے دیسی انڈہ لینا ہےاورا س کو ابال لینا ہے۔ اس ابال کر چھیل کر اپنے پاس رکھنا ہے۔ اور یاد رہے کہ آپ جب اس عمل کےلیے بیٹھے پہلے باوضو ہوکر بیٹھے اس انڈے پر آپ نے سب سےپہلے ایک مرتبہ “دورد پاک ” پڑھنا ہے۔ اور اس کے بعد اکیس مرتبہ ” سورت اخلاص “پڑھنی ہے۔ا ور آخر میں ایک مرتبہ ” درود ابراہیمی ” پڑھنا ہے۔

اور اس عمل کو مکمل کرنے کے بعد آپ نے اس انڈے پر دم کردیناہے۔ اور اس انڈے کو آپ نے کھالینا ہے۔ ایک انڈہ صبح کے وقت یہی عمل کرکے کھالینا ہے۔ اور ایک انڈے آپ نے شام کے وقت اسی طرح عمل کرکے کھالینا ہے۔ اس عمل کو آپ نے پندرہ دن تک مسلسل کرناہے۔ پھر آپ خود محسو س کریں گے ۔ جو لوگ چاہتے ہیں کہ وہ جلد بوڑھے نہ ہوں۔ ان کے بال جلدی سفید نہ ہوں۔ ان کے جسم میں درد نہ ہو۔ وہ جوان دکھائی دیں۔ ایسے لوگ اس عمل کو ضرور کریں۔ جو مردانہ کمزوری کا شکار ہیں۔ وہ بھی اس عمل کو ضرور کریں۔ انشاءاللہ! آپ کو ضرور فائدہ ہوگا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.