”صبح و شام کا خاص اور مجرب وظیفہ۔ اللہ کا وعدہ۔ جو تو نے مانگا تجھے عطا کر ونگا۔ تیری ہر حاجت پوری کروں گا۔“

نبی ﷺ نے فرمایا جو بندہ صبح کے وقت اور شام کے وقت سو سو بار الحمد للہ پڑھتا ہے وہ ایسا ہے جساو کہ اس نے سو گھوڑے سامان سے لاد کر جہاد مںم دیئے ہوں یا پھر اس نے سو جنگوں کے اندر خدا تعالیٰ کے لئے جہاد کاہ ہو فرمایا جو بندہ صبح کے وقت اور شام کے وقت سو سو بار یہ پڑھتا ہے اشھد ان لا الہ الا اللہ وحدہ لاشریک لہ واشھد ان محمد عبدہ ورسولہ سو بار صبح اور سو بار شام کو پڑھتا ہے وہ ایسا ہے اللہ تعالیٰ اس کو اتنا اجر عطا فرماتا ہے کہ اس نے اسماعل ؑ کی اولاد مںس سے سو غلاموں کو آزاد کات ہو۔ فرمایا جس بندے نے یہ سو سو بار صبح اور شام کو اللہ اکبر پڑھا فرمایا اس دن کوئی بھی بندہ جتنی مرضی عبادت کر لے اس سے بڑھ کر ثواب پانے والا نہںل ہوسکتا سب سے بڑا عابد ییش ہوگا ۔

یہ دوسری حدیث پاک پاورے آقاﷺ نے ارشاد فرمایا جو شخص صبح اور شام کو صبح سورج طلوع ہونے سے پہلے شام کو سورج غروب ہونے سے پہلے جو بندہ سو بار سبحان اللہ پڑھتا ہے فرمایا وہ سو اونٹ خدا تبارک وتعالیٰ کی راہ مںر قربانی کرنے سے بھی اس کو زیادہ ثواب ملتا ہے اور فرمایا جو شخص سو بار الحمد للہ پڑھتا ہے سورج طلوع ہونے سے پہلے اور سورج غروب ہونے سے پہلے فرمایا کہ سو گھوڑے سامان سے لدے ہوئے اللہ تعالیٰ کی راہ مںو دینے سے بھی زیادہ ثواب اس کو ملے گا رسول اللہ ﷺ نے ارشاد فرمایا جو شخص سو بار صبح سو بار شام کو سورج طلوع ہونے سے پہلے اور غروب ہونے سے پہلے سو سوبار لا الہ الا اللہ وحدہ لا شریک لہ لہ الملک ولہ الحمد وھو علی کل شئہ قدیر پڑھتا ہے تو فرمایا اس دن کوئی بھی بندہ ایسا نہںح ہے جو اس سے افضل عمل کرسکا ہو یین کہ سب سے افضل عمل اسی بندے کے نامہ اعمال مںت لکھا جاتا ہے تسروی حدیث پاک: حضرت سدسنا ثمرہ بن جندب رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہں فرمایا کہ کاے مںے تمہںی حضرت حسن کو فرمایا مںں تمںاپ وہ حدیث نہ سناؤں جو مںد نے آقاﷺ سے بھی کئ بار سنی ہے حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے بھی کئی بار سنی ہے

اور حضرت عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے بھی کئی بار سنی ہے تو کہتے ہںر کہ مںن نے کہا کوفں نہںل ضرور سنائںں انہوں نے کہا کہ آقاﷺ نے فرمایا اور حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ تعالیٰ عنہ اور حضرت عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے فرمایا کہ جو بندہ صبح کو شام کو یہ پڑھتا ہے اللھم انت خلقتنی وانت تھدیی وانت تطعمنی وانت تسقینی وانت تمیتنی وانت تحیینی فرمایا کہ جو بندہ یہ پڑھتا ہے پھر یہ پڑھ کر جو بھی خدا تعالیٰ سے مانگے مولا تعالیٰ ضرور عطافرماتے ہںن حضرت سدلنا عثمان بن عفان رضی اللہ تعالیٰ عنہ یینل عثمان ذوالنورین رضی اللہ تعالیٰ عنہ آپ نے پوچھا آقاﷺ سے یا رسول اللہ یہ زمنونں اور آسمانوں کی چابایں کام ہںی آقاﷺ نے فرمایا مجھ سے آپ کے علاوہ یہ بات کسی نے نہںع پوچھی فرمایا آسمان اور زمنل کی چابایں یہ ہںھ لا الہ الا اللہ واللہ اکبر سبحان اللہ وبحمدہ استغفراللہ لاحول ولا قوۃ الا باللہ الاول الظاہر والباطن بدمہ الخرآ ییی ویتبا وھو علی کل شئی قدیر

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.