غیبی قوتوں کو فوری اپنے سامنے حاضر کروا کے ان سے ہر طرح کا کام کروائیں ، اللہ پاک کے یہ 2نام پڑھیں اور کمال دیکھیں

آج آپ کو خوبصورتی پری کی حاضری کا طریقہ بتائیں گے ۔ اس وظیفہ کو صرف مسلم لوگ کرسکتے ہیں غیر مسلم کریں گے تو حاضری نہیں ہوگی ۔ کیونکہ اسلام کا ہونا اس وظیفے کیلئے لازم ہے ۔ اب آپ کو عمل بتاتے ہیں یہ وظیفہ انتہائی آسان ہے آپ نے صرف ایک ہی لفظ کا ور د کرنا ہے جو کہ عام روٹین میں پڑھا جاتا ہے ۔ جس کے بعد حاضری ہوگی تو ایک خوبصورت پری کی ہوگی ۔ جوکہ سفید لباس میں آئیگی ۔ آپ نے اللہ ھو کتنی دفعہ پڑھنا اور کب پڑھنا ہے وہ آپ کو بتاتیں ہیں۔ اسکو مسجد ،میدان گھر میں جس جگہ چاہیں کرسکتے ہیں اس جگہ کا پاک صاف ہونا انتہائی ضروری ہے ۔ آپ عشاء کی نماز کے بعد کریں جب گھر کے افراد سو جائیں تنہائی والی جگہ پر چلے جائیں تاکہ کوئی تنگ نہ کرے ۔ جس جگہ پر آپ نے عشاء کی نماز پڑھی ہوگی اگر آپ اس جگہ پر بیٹھ کر اس وظیفہ کو کرتے ہیں تو ہر صورت میں حاضری ہوگی ۔

اگر اس کے دوران کوئی غلطی بھی کریں گے پھر بھی حاضری ہوگی ۔ ایسی باتیں کوئی بھی عامل نہیں بتائے گا۔ آپ نے یہ وظیفہ سفید لباس پہن کر گلاب اتر لگا کر کرنا ہے ۔ آپ نے کھڑے ہوکر سر کو جھکا کر اس نام کا ورد کرنا ہےصرف گیارہ سو مرتبہ آپ نے یکسوئی سے کرنا ہے ۔جیسے آپ اللہ کے سامنے جھکے ہوئے اور دل سے پڑھنا ہے زبان سے نہیں پڑھنا۔جب آپ نوسو یا ہزار کے قریب پہنچیں گے تو حاضری ہوجائیگی وہ اصل نہیں ہوگی ۔ وہ تو کہے گی میں حاضر ہوگئی ہوں آپ ابھی ہی پڑھائی کو ختم کردیں آپ نے پڑھائی کو ختم نہیں کرنا ۔اگر آپ میں روحانیت کافی زیادہ ہوئی تو پھر آپ اس عمل کو روک سکتے ہیں۔ اگر آپ کے پاس روحانیت کم ہے تو گیارہ سو سے بھی زیادہ بار پڑھنا ہے ۔ جب آپ سفید لباس پہن کر عشاء کی نماز پڑھیں اور عمل کی نیت سے کھڑے ہوں تو فوراً ہی حاضری ہوجائے ۔ آپ حیران ہوچکے ہوں گے کہ ہم نے تو کچھ پڑھا ہی نہیں ہوگا بس نیت کی ہوگی وہ دراصل پری نہیں ہوگی وہ ہوگا شیطان جو اس نیک عمل سے روک رہا ہوگا۔ آپ نے کسی چیز پر غور نہیں کرنا ۔گھبرانانہیں ہے جونہی آپ کی تعداد مکمل ہوگی اس کے بعد ہی اصل پری کی حاضری ہونی ہے آپ کو عمل سے بڑا ہی روکا جائے گا ۔ آپ نے رکنا نہیں آپ نے لگاتار اس تعداد کو پورا کرنا ہے ۔

اس پری کی کچھ نشانیاں دیتا ہوں جس پر آپ پہچان سکیں کہ اب ہوئی ہے اصل پری کی حاضری اس نے اپنے دونوں ہاتھوں میں گلاب کے گجرے پہنیں ہوں گے اور شہادت والی انگلی میں ایک سرخ رنگ کی موتی والی انگوٹھی ہوگی جونہی وہ حاضر ہو تو آ پ نے چند باتوں کی گفتگو کرنی ہے ۔ آپ نے کہنا ہے کہ آپ کو حضرت سلیمان ؑپیغمبر کی قسم آپ نے مجھے یا میری فیملی کو کسی بھی قسم کا نقصان نہیں دینا آپ نے میری ہر جائز بات ماننی ہے ۔ اگر آپ اس وقت کہہ دیتے ہیں کہ آپ نے میری ناجائز بات ماننی ہے میرے حق میں چاہے اچھا ہو یا بُرا ہو آپ نے میرا ہر کام کرنا ہے اس کے بعد ہوگا یہ اگر آپ اس سے کوئی بھی بر ا کام کروائیں گے یا نیک کام کروائیں گے وہ آپکے نامہ اعمال میں لکھا جائیگا ۔ کیونکہ وہ آپ کی غلام بن چکی ہے اور آپ نے اس کو برے کام کرنے کی بھی قسم دے دی ہے ۔آپ نے کوشش تو یہ کرنی ہے کہ نیک کام کی التجا کرئیے گاکہ آپ نے میرا صرف جائز کام کرنا ہے اگر میں ناجائز کہوں بھی تو آپ نے وہ کام ہرگز نہیں کرنا اور مجھے بھی روک دینا ہے ۔ جونہی آپ اس کو یہ قسم دیں گے اس کے بعد وہ آپکو اپنے ہاتھ سے انگوٹھی نکال کر دیدے گی اور وہ جو بھی طریقہ کار آپکو بتائے کہ آپ نے انگوٹھی کو رگڑنا ہے تو میں فوراً حاضر ہوجاؤں گی آپ نے اس بات پر عمل کرنا ہے اور اسی طریقے سے دوبارہ حاضری کرلیجئے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.